اعلی درجے کی تلاش
کا
4237
ظاہر کرنے کی تاریخ: 2012/04/03
سوال کا خلاصہ
کیا سرمہ لگانے کے بعد وضو یا غسل کیا جا سکتا ہے ؟
سوال
کیاسرمہ لگے ہونے کی صورت میں وضو یا غسل کیا جا سکتا ہے ؟
ایک مختصر

وضو اور غسل میں بدن کے اعضاء اور اس کی کھال پر کوئی ایسی چیز نہ لگی ہونی چاہئے جو پانی کے پہنچنے میں رکاوٹ ہو؛ لہذا اگر سرمہ صرف آنکھوں کے اندر لگا ہو وضو  اور غسل کے صحیح   ہونے میں رکاوٹ نہیں ہے یعنی وضو یا غسل صحیح ہے ؛لکین اگر سرمہ آنکھوں کے اطراف یا ابرو کی جگہ پر لگا ہو تو دیکھنا چاہئے کہ وہ اتنا ہے جو پانی کے اعضائے وضو یا غسل تک پہنچنےمیں رکاوٹ بنتا ہے یا نہیں ؟

اب یہ دیکھتے ہوئے کہ اس  مسئلہ میں فقہا کے درمیان کوئی اختلاف  نہیں ہے ؛ اس بارے میں حضرت آیت اللہ بہجت سے پوچھے گئے سوال کا جواب پیش کرتے ہیں :

’’ اگر سرمہ چرب و روغنی ہو اس طرح کہ عرفاً جسم تک پانی پہنچنے میں رکاوٹ ہو اور آنکھوں سے باہر تک کھنچا ہوا ہو (صرف آنکھوں کے اندر نہ ہو) اور یہ بھی یقین ہو کہ غسل سے پہلے موجود تھا تو وہ دوبارہ غسل کرنا ہوگا‘‘ [1]

 

 


[1] ۔ بہجت ؛محمد تقی؛ استفتااءت ج۱؛ ص۷۲۳۲ ؛ نشر دفتر حضرت آیت اللہ بہجت ؛قم؛ اوّل؛ ۱۴۲۸ ق

 

دیگر زبانوں میں (ق) ترجمہ
تبصرے
تبصرے کی تعداد 0
براہ مہربانی قیمت درج کریں
مثال کے طور پر : Yourname@YourDomane.ext
براہ مہربانی قیمت درج کریں
<< مجھے کھینچ کر لائیں.
سیکورٹی کوڈ از صحیح رقم درج کریں

زمرہ جات

بے ترتیب سوالات

ڈاؤن لوڈ، اتارنا